میرا دل آج پھر دسمبر کو یاد کرتا ہے

April 6, 2013 - Less than a minute read
دسمبر

source:www.seniorsworldchronicle.com

وہ سرد ہوا کے جھونکے
وہ یاد ماضی کے دھوکے
وہ اضطراب میں سکوں
وہ حالت جنوں
پھر سے کوئی بیتاب کرتا ہے
میرا دل آج پھر دسمبر کو یاد کرتا ہے

خشک پتوں کی ہوا سے اٹکھیلیاں
کالے بادلوں میں ڈوبا ہوا سویرا
وہ وقت کا رُک کے گزرنا
وہ درختوں کا اپنے خالی پن کو تکنا
پھر سے آج کوئی ویراں کرتا ہے
میرا دل آج پھر دسمبر کو یاد کرتا ہے

وہ ہوا کی سرگوشیوں کو رُک کے سننا
وہ روشنیوں کا انھیروں میں اترنا
وہ بہاروں کے انتظار میں گزرے دن
وہ خزاں کی اداسی میں مچلتے دل
کون بے وفا پھر آواز کرتا ہے
میرا دل آج پھر دسمبر کو یاد کرتا ہے

Written By : Sohail Khan

Tags: , , , , , , , ,