پتھروں کا شہر | بزمِ اْردو کی دؤم بہترین تحریر

June 8, 2013 - Less than a minute read

sadghazalz.blogspot.com

sadghazalz.blogspot.com

پتھروں کے اس شہر میں
کہاں سے لاؤں وہ باوفا دل
جو چاہتوں کی کتاب لکھے
محبتوں کے نصاب لکھے
میرے چہرے پر سوال ہیں جو
کوئی جو ان کے جواب لکھے
بتاؤ تم ہی، کہاں سے لاؤں
وہ دل،جو چہرہ شناس بھی ہو
جو مسکرائے، اداس بھی ہو
جو جان لے یہ ہنسی ہے جھوٹی
اور ضبطِ جاں کو عذاب لکھے
جو حقیقتوں سے اٹھائے پردہ
اور خواہشوں کو سراب لکھے
کوئی تو ہووہ وفا کا پیکر
جو میرے دکھ کا جواز سمجھے
جو میرے اشکوں کا راز سمجھے
اور آنکھ کو جو سحاب لکھے
مگر بتاؤ کہاں ملے گا
پتھروں کے اس شہر میں

Written By: Umme Hani

Tags: , , , , , , , , ,